LYRICS - WADA NIBHA RAHEY HAI HUSSAIN - MUKHTAR HUSSAIN FATEHPURI - MUHARRAM 1443 - 2021

LYRICS - WADA NIBHA RAHEY HAI HUSSAIN - MUKHTAR HUSSAIN FATEHPURI - MUHARRAM 1443 - 2021 


 

⚫️Lyrics⚫️:

Jo Tha Khuda se wo wada Nibha Rahay Hain Hussainؑ Khud apnay qadmon se…. Khud apnay qadmon se maqtal ko jaa rahay hain hussainؑ Jab apnay Nanaؐ ki turbat ko Alwida Kaha Tou arahi thi Baqiyya se Fatimaّ ki Sada Utho lehad se….. Utho lehad se baba wo jaa rahay hain hussainؑ Khuda ki rah’h mein sughraّ ko tanha chor diya Wo lakh kehti rahi mujhko le chalo baba Lipat ke beti ….. Lipat ke beti se ansu baha rahay hain hussainؑ Qayamat agayi jab ayi jab ayi shaam e ashura Sagheer bachon mein jab alatash ka shor barha Galay laga ke ….. Galay Laga ke unhein rotay jaa rahay hain hussainؑ Tulu hogayi karbal mein subhe qatal e hussainؑ Utha raha tha har ik lash khud batoolّ ka chayn Khuda apnay hathon se…. Khud apnay hathon se maqtal saja rahay hain hussainؑ Shaheed jab hua ghaziؑ hussainؑ toot gaye Tou lasha chor ke darya pe soye khaima chalay Alam ke sath dou….. alam ke sath dou bazu bhi larahy hain hussainؑ Phir ek zulm pe arsh e azeem kaanp gaya Pidar ki goud mein baisheer ko jo teer laga Wo dekho choti si….. wo dekho choti si turbat bana rahay hain hussainؑ Haram mein hashr tha jab waqt e asr aa phoncha Sakinaؔ dhund rahi thi kidhar gaye baba Khuda ke sajday mein…. Khuda ke sajday mein gardan kata rahay hain hussainؑ Tha noha majid O mukhtar ran mein zainabؔ ka Para hai dhoop mein lasha tumhara ayy bhaiya Haram tumharay…. Haram tumharay suey shaam jaa rahay hain hussainؑ

جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین
خود اپنے قدموں سے مقتل کو جا رھے ھیں حسین

جب اپنے نا نا کی تربت کو الوداع کہا
تو آ رہی تھی بقیعہ سے فاطمہ کی صدا
اُٹھو لحد سے اے بابا وہ جا رھے ھیں حسین

خُدا کی راہ میں صغریٰ کو تنہا چھوڑ دیا
وہ لاکھ کہتی رہی مُجھ کو لے چلو بابا
لپٹ کے بیٹی سے آنسُو بہا رھے ہیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

قیامت آ گئی جب آئی شام عاشورا
صغیر بچّوں میں جب العطش کا شور بڑھا
گلے لگا کے اُنہیں روتے جا رھے ھیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

طلوع ہو گئی کربل میں صبح قتلِ حسین
اُٹھا رہا تھا ہر اِک لاش خود بتول کا چین
خود اپنے ہاتھوں سے مقتل سجا رھے ہیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

شہید جب ہوا غازی حسین ٹوٹ گئے
تو لاشہ چھوڑ کے دریا پہ سوئے خیمہ چلے
علم کے ساتھ دو بازو بھی لا رھے ھیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

پھر ایک ظلم پہ عرش عظیم کانپ گیا
پدر کی گود میں بیشیر کو جو تیر لگا
وہ دیکھو چھوٹی سی تربت بنا رھے ھیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

حرم میں حشر تھا جب وقتِ عصر آ پہنچا
سکینہ ڈھونڈھ رہی تھی کدھر گئے بابا
خدا کے سجدے میں گردن کٹا رھے ھیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین

تھا نوحہ ماجد و مختار رن میں زینب کا
پڑا ہے دھوپ میں لاشہ تمہارا اے بھیّا
حرم تمہارے سوئے شام جا رھے ھیں حسین
جو تھا خُدا سے وہ وعدہ نبھا رہے ہیں حسین



LYRICS - WADA NIBHA RAHEY HAI HUSSAIN - MUKHTAR HUSSAIN FATEHPURI - MUHARRAM 1443 - 2021 LYRICS - WADA NIBHA RAHEY HAI HUSSAIN - MUKHTAR HUSSAIN FATEHPURI - MUHARRAM 1443 - 2021 Reviewed by Nohayonline.lyrics on 12:49 AM Rating: 5

No comments:

All lyrics are Provided By Videos Caption and Noha Video Description. Any Problem Email Me. Powered by Blogger.